اختلافات یا کچھ اور۔!! جہانگیر ترین اور وزیراعظم میں ناراضگی ہے یا نہیں؟ پی ٹی آئی رکن قومی اسمبلی کا بڑا دعویٰ

اسلام آباد (ویب ڈیسک) تحریک انصاف کے رہنما،رکن قومی اسمبلی صداقت علی عباسی نے کہا ہے کہ ق لیگ کا مطالبہ ہے کہ انہیں مشاورت میں زیادہ شامل کیا جائے۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے صداقت علی عباسی کا کہنا تھا کہ شکوے سننے اور دور کرنے کے لیے میٹنگز ہوتی ہیں،



سیاست کے بجائے ریاست پر حملے ہورہے ہیں،کسی کو موقع نہیں دینا چاہیے کہ وہ ملک کے خلاف بات کرے،طارق بشیر چیمہ ہر ہفتے وزیراعظم سے ملاقات کرتے ہیں،پنجاب اور وفاق میں اہم وزارتوں پر ق لیگ کے لوگ ہیں۔ صداقت علی عباسی کا مزید کہنا تھا کہ مریم نواز نے کہا جو ن لیگ چھوڑے ان کے گھروں کا گھیراوَ کیا جائے، جہانگیر ترین کے آنے اور جانے پر کوئی پابندی نہیں ہے، وزیراعظم عمران خان اور جہانگیر ترین میں کوئی ناراضگی نہیں ہے،اپوزیشن سے کوئی خطرہ نہیں ہے۔ صداقت علی عباسی کا مزید کہنا تھا کہ سب کو پتا ہے کہ اپوزیشن این آر او مانگ رہی ہے۔ یاد رہے کہ چینی اسکینڈل میں نام آنے کے بعد جہانگیر ترین بیرون ملک چلے گئے تھے جس پر اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے حکومت پر بڑی تنقید کی گئی تھی اور کہا گیا تھا کہ عمران خان نے جہانگیر ترین کو این آر او دے دیا تا ہم وہ واپس پہنچ گئے ہیں ،جہانگیر ترین کی لندن موجودگی کے دوران نواز شریف سے ملاقات اور رابطوں کی خبریں بھی چلائی گئیں لیکن جہانگیر ترین نے سینئر صحافی و اینکر پرسن مبشر لقمان سے بات چیت میں اس کی تردید کی تھی۔ جہانگیر ترین لندن سے کچھ فاصلے پر نیوبری میں اپنے ہائیڈ ہاؤس نامی فارم ہاؤس رہائش پذیر ہیں۔ جہانگیر ترین کے ساتھ ان کے صاحب زادے علی ترین بھی اسی فارم پر موجود تھے، انہوں نے گزشتہ دنوں بیٹے کے ہمراہ سوئٹزرلینڈ کا بھی دورہ کیا تھا۔







%d bloggers like this: