اسٹیبلشمنٹ سے بات کرنا پی ڈی ایم کامشترکہ فیصلہ پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمان نے بھی بڑا اعلان کر دیا

اسلام آباد(آئن لائن)اپوزیشن جماعتوں کے اتحادی پلیٹ فارم پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ پی ڈی ایم کے دو جماعتو ں کے لیڈرو ں نے جو انٹر ویو دیئے ہیں ان کے الفاظ کی تعبیر میں اختلاف تو ہو سکتا ہے لیکن اس بات پر پی ڈی ایم میں کوئی اختلاف نہیں کہ 2018 کےالیکشن میں دھاندلی ہو ئی ہے اور اس دھاندلی کے ذمہ دار سول و فو جی اسٹیبلشمنٹ ہیں اس لئے ہم ان ذمہ دارو ں سے بات کرینگے نہ کہ موجو دہ جعلی حکومت سے انہوں نے کہا کہ اداروں

کو یہ احساس دلا نا چاہتے ہیں کہ وہ سیا ست میں حصہ نہ لیں اس سے ملک میں بحرا نی کیفیت پیدا ہو تی ہے انہوں نے کہا کہ سلیکٹیڈ حکومت خا رجہ محا ذ پر مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے اور سعو دی عر ب اور متحدہ عر ب امارات جیسے قریبی دوستو ں سے بھی ہمارے تعلقات خرا ب ہو چکے ہیں اس وقت عوام موجو د ہ جعلی حکومت سے نا لا ں ہے مہنگا ئی، کر پشن، عرو ج پر ہے اور عوام کو موجو د ہ جعلی حکومت سے نجات دلا کر رہینگے، انہوں نے کہا کہ عمرا ن خا ن اپنی تقریر کا لب و لہجہ تبدیل نہیں کر سکا تو وہ تبدیلی کیا لائیگا صرف عمران خان کو ہٹانے سے کوئی تبدیلی نہیں آئیگی نئے الیکشن پاکستان کی ضرور ت ہے انہوں نے کہا کہ میڈیا پرجتنی قدغنیں اس حکومت میں لگائی ہیں پہلے کبھی نہیں تھی اور میڈیا کی شخصیات نے قید و بند کی صعو بتیں جھیلیں اور اب بھی میڈیا کے سر برا ہان کے سر و ں پر تلوار لٹک رہی ہے۔ ‎

Leave a Reply

%d bloggers like this: