املا کی چھوٹی سی غلطی کی وجہ سے خطرناک قاتل پولیس کی گرفت میں

بھارتی ریاست لکھنؤ میں پرتاب سنگھ نامی شخص نے 26 اکتوبر کو 8 سال کے بچے کو اس کے ننھیال کے گھر کے قریب سے اغوا کیا اور بچے کے اہلخانہ کو ٹیکسٹ میسج لکھا کہ "دو لاکھ سیتا پور لے کر پہنچیے۔ پولیش کو نہیں بتانا نہیں تو ہتیہ کر دیں گے”۔

مقامی پولیس نے جس نمبر سے تاوان کا میسج آیا اس کی تفصیلات نکالیں تو اس کے مالک کا پتہ چلا جس نے بتایا کہ اس کا موبائل اور سم کارڈ کچھ روز پہلے گم ہو گیا تھا۔ تاہم اس نے بتایا کہ یہ میسیج اس نے نہیں کیا۔

پولیس نے سی سی ٹی وی کیمرے سے حاصل ہونے والی فوٹیج کی مدد سے جائے وقوعہ کے آس پاس موجود پائے گئے 10 مشکوک افراد کی نشان دہی کی۔ ان میں پرتاب سنگھ بھی شامل تھا۔

پولیس نے ان مشکوک افراد کو کہا کہ اپنے موبائل سے ہمیں یہ میسج ٹائپ کر کے بھیجیں’’ میں پولیس میں بھرتی ہونا چاہتا ہوں۔ میں ہردوئی سے سیتا پور دوڑ کر جا سکتا ہوں‘‘

سبھی افراد نے یہ میسج لکھ کر پولیس کے بتائے ہوئے نمبر پربھیج دیا۔ مگر اس قاتل پرتاب سنگھ نے اس میسج میں بھی املا کی وہی غلطی کی جو وہ تاوان کا مطالبہ کرنے کے لیے بھیجے گئے ٹیکسٹ میسج میں کرچکا تھا اور پولیس کو ’’پولیش‘‘ لکھا۔

دونوں ٹیکسٹ میسیجز میں ایک ہی لفظ کے غلط املا کی مماثلت سے پولیس کا شک بڑھا اور رام پرتاب سنگھ کو گرفتار کرلیا گیا۔ گرفتاری کے بعد پرتاب سنگھ نے اپنے جرم کا اعتراف بھی کرلیا۔

The post املا کی چھوٹی سی غلطی کی وجہ سے خطرناک قاتل پولیس کی گرفت میں appeared first on Siasat.pk Urdu News – Latest Pakistani News around the clock.

%d bloggers like this: