انسداد دہشتگردی عدالت کا منظور پشتین اورمحسن داوڑ کو گرفتار کرنے اور شناختی کارڈ بلاک کرنے کا حکم

انسداد دہشت گردی کی کراچی عدالت نے اشتعال انگیز تقریر اور بغاوت کیس میں پشتون تحفظ موومنٹ کے لیڈر منظور پشتین اور وزیرستان سے نو منتخب ایم این اے محسن داوڑ کے شناختی کارڈ بلاک کرنے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں اشتعال انگیز تقریر اور بغاوت کےکیس کی سماعت ہوئی ، عدالت نے منظور پشتین اور محسن داوڑ سمیت 2 ملزمان کے وارنٹ جاری کردئیے۔

ملزمان میں منظور پشتین، یاسین اور سفیان شامل ہیں، عدالت نے حکم دیا کہ ملزمان کو گرفتار کرکے 9مارچ تک پیش کیا جائے۔

دوران سماعت اشتعال انگیز تقریر اور بغاوت کیس میں پیشرفت ہوئی ، عدالت نے منظورپشتین اور محسن داوڑ کے شناختی کارڈ بلاک کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا شناختی کارڈ بلاک کرکے رپورٹ پیش کی جائے۔ بعد ازاں انسداددہشت گردی عدالت میں سماعت 9مارچ تک ملتوی کردی گئی۔

یاد رہے کہ پی ٹی ایم نے گزشتہ ماہ  کراچی میں جلسہ کیا جس کے بعد پی ٹی ایم کے رہنماء علی وزیر کو پشاور سے گرفتار کر کے کراچی منتقل کیا گیا۔ ان پر الزام تھا کہ انہوں نے اس جلسے میں اشتعال انگیز تقریر کی اس لئے ان پر بغاوت کا مقدمہ چلایا گیا۔ اب محسن داوڑ اور منظور پشتین کو اسی کیس میں گرفتار کرنے کے احکامات جاری کئے گئے ہیں۔

%d bloggers like this: