براڈ شیٹ کیس میں پاکستان کو دھچکا، لندن میں پاکستانی ہائی کمیشن کے اکاؤنٹس منجمد

براڈ شیٹ کیس میں اہم پیش رفت کے تحت لندن میں پاکستانی ہائی کمیشن کے اکاؤنٹس منجمد کردیے گئے۔

مصالحتی عدالت نے قومی احتساب بیورو (نیب) کو 2 کروڑ 9 لاکھ ڈالر جرمانہ 30 دسمبر تک ادا کرنے کا حکم دیا تھا۔ 2018میں نیب کو براڈ شیٹ سے معاہدہ ختم کرنے پر 1 کروڑ 70 لاکھ ڈالر جرمانہ ہوا تھا جس کے بعد ہائی کمیشن لندن کے اکاؤنٹ سے رقم مہیا نہیں کی گئی،

نیب نے وزارت قانون کی ہدایت کے برعکس 2 سال تک جرمانہ ادا نہ کیا، جرمانہ ادا نہ کرنے پر دو سال میں سود بھی شامل ہو گیا۔

ذرائع کے مطابق براڈ شیٹ کیس میں لندن کی مصالحتی عدالت نے 2018 میں نیب کے خلاف 2 کروڑ ڈالر جرمانہ عائد کیا تھا، نیب نے رقم ادا نہ کی جس پر پاکستانی ہائی کمیشن کا اکاؤنٹ منجمد ہوا۔ دوسری جانب  ترجمان پاکستانی ہائی کمیشن کا کہنا ہے کہ اکاؤنٹس منجمد نہیں ہوئے۔

لندن مصالحتی عدالت نے2کروڑ 9لاکھ ڈالر 30 دسمبر تک ادا کرنے کا حکم دیا تھا، پاکستانی روپوں میں یہ رقم ساڑھے چار ارب روپے بنتی ہے، مصالحتی عدالت نےاپنے حکم میں قرار دیا کہ عدم ادائیگی پر اکاؤنٹ منجمدکرکےرقم یکطرفہ طور پر منہا کی جائے تاہم اعلیٰ سفارتی ذرائع کے مطابق ہائی کمیشن لندن کےاکاؤنٹ سے رقم منہا نہیں کی گئی۔

پاکستانی ہائی کمیشن کا مؤقف ہے کہ سفارتخانوں کوجنیواکنونشن کےتحت استثنیٰ حاصل ہوتاہے اس لئے انکا اکاونٹ منجمد نہیں ہو سکتا۔

%d bloggers like this: