راول ڈیم سے متعلق 30 سال بعد وفاقی حکومت کا اہم فیصلہ

راول ڈیم سے 30 سال بعد اسلام آباد کے لیے 40 لاکھ گیلن پانی یومیہ حاصل کرنے کا فیصلہ

کیپیٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) نے 30 سال کے بعد راول ڈیم سے اسلام آباد کے دو رہائشی سیکٹرز کی پانی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے 40 لاکھ گیلن یومیہ پانی حاصل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

سی ڈی اے کے چیئرمین امر علی احمد کا اس فیصلے کے حوالے سے خبر رساں ادارے سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ راول ڈیم سے شہری اتھارٹی ماضی میں بھی اسلام آباد کے رہائشیوں کی پانی کی ضروریات پوری کرنے کے لیے پانی حاصل کرتی رہی ہے، لیکن بہت عرصہ پہلے پانی آلودہ ہونے کی رپورٹس پر راول ڈیم سے پانی حاصل کرنے کا سلسلہ بند ہو گیا تھا۔

سی ڈی اے کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ اس منصوبے کے تحت راول ڈیم سے دارالحکومت اسلام آباد کے حصے کا منظور شدہ پانی حاصل کرنے کے لیے منصوبہ بندی کر رہے ہیں، ہماری پوری ٹیم اور بورڈ ممبران کی جانب سے اس منصوبے پر کام شروع کردیا گیا ہے، اسی سلسلے میں اراکین نے متروکہ ٹریٹمنٹ پلانٹ کا دورہ کیا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ اتھارٹی کی لاپرواہی کی وجہ سے دارالحکومت اسلام آباد نے 1992 کے بعد سے راول ڈیم کے پانی میں موجود اپنا حصہ نہیں لیا تھا، جبکہ 1992 تک شہری انتظامیہ اس پاور پلانٹ کے ذریعے راول ڈیم سے پانی حاصل کرتی رہی ہے اور یہ متروکہ ٹریٹمنٹ پلانٹ گارڈن ایونیو پر پولو کلب کے قریب واقع ہے۔

خیال رہے کہ دارالحکومت اسلام آباد پانی کی شدید قلت کا شکار ہے، اسلام آباد شہر کو پانی کی ضروریات پوری کرنے کے لیے 22 کروڑ گیلن پانی یومیہ کی ضرورت ہے، لیکن صرف 6 کروڑ 50 لاکھ گیلن پانی یومیہ تین مختلف ذرائع سملے ڈیم، خان پور اور ٹیوب ویلز سے حاصل کر کے اسلام آباد کے شہریوں کو فراہم کیا جاتا ہے۔

The post راول ڈیم سے متعلق 30 سال بعد وفاقی حکومت کا اہم فیصلہ appeared first on Siasat.pk Urdu News – Latest Pakistani News around the clock.

%d bloggers like this: