علامہ خادم حسین رضوی کے بعد تحریک لبیک پاکستان کے سربراہ کون مقرر ہوئے ؟

 

مذہبی و سیاسی جماعت ٹی ایل پی( تحریک لبیک پاکستان) کے سربراہ علامہ خادم حسین رضوی کی وفات کے بعد سب سے بڑا سوال یہ اٹھا کہ اب اتنی بڑی تحریک کو کون لے کر چلے گا۔

جس کے بعد جماعت کی مجلس شوریٰ نے فیصلہ کیا کہ ان کے صاحبزادے علامہ سعد حسین رضوی کو تحریک لبیک کا سربراہ بنا دیا جائے، تحریک لبیک پاکستان کے نئے امیر کا اعلان مینار پاکستان گراونڈ میں علامہ خادم حسین رضوی کے نماز جنازہ کے اجتماع کے موقع پر کیا گیا۔

علامہ سعد حسین رضوی نے نماز جنازہ سے قبل مینار پاکستان گراؤنڈ میں ہی ٹی ایل پی کے نئے سربراہ کی حیثیت سے حلف اٹھایا۔ وہ پہلے  تحریک لبیک پاکستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل تھے۔ علامہ سعد رضوی نے اپنے مرحوم والد خادم حسین رضوی کی نماز جنازہ پڑھائی اور شرکا سے ان کا مشن جاری رکھنے کا حلف لیا۔

مولانا خادم حسین رضوی کے جنازے کے لیے دور دراز علاقوں سے ہزاروں کی تعداد میں لوگ مینار پاکستان پارک پہنچے۔ ان کی وفات پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، وزیراعظم عمران خان اور دیگر اہم سیاسی شخصیات نے اظہار تعزیت کیا جبکہ وفاقی وزیر مذہبی امور نورالحق قادری اور دیگر سیاسی شخصیات نے جنازے میں شرکت بھی کی۔

خادم رضوی کی وفات سے متعلق جماعت کے ترجمان کا کہنا ہے کہ وہ کچھ روز سے بیمار تھے جبکہ شیخ زید ہسپتال جہاں خادم رضوی کی وفات کی خبر ملی وہاں کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ انہیں جمعرات کے روز رات 8 بجے کے بعد مردہ حالت میں ہسپتال لایا گیا تھا۔

ہسپتال انتظامیہ کا کہنا ہے کہ اگر کسی کو مردہ حالت میں ہسپتال لایا جائے تو اس کی موت وجہ کا تعین کرنا ہسپتال کی ذمہ داری نہیں ہوتی۔

The post علامہ خادم حسین رضوی کے بعد تحریک لبیک پاکستان کے سربراہ کون مقرر ہوئے ؟ appeared first on Siasat.pk Urdu News – Latest Pakistani News around the clock.

%d bloggers like this: