عوامی دباؤ کام کر گیا! حکومت کا شادی ہالز سے متعلق بڑا فیصلہ

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) پنجاب حکومت نے شادی ہالز بند نہ کرنے کے حوالے سےاہم فیصلہ کرلیا ۔



میڈیا رپورٹس کے مطابق صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال کی زیر صدارت تاجر برادری کو درپیش مسائل بارے اہم اجلاس میں تاجروں نے بڑی تعداد میں شرکت کی اور اپنے مسائل بارے آگاہ کیا۔


اس موقع پر میاں اسلم اقبال نے کہا کہ پنجاب حکومت کی کوشش ہے کہ شادی ہالز بند نہ کیے جائیں جن کے لیے پنجاب حکومت نے شفارشات مرتب کر کے منظوری کے لیے وفاق کو بھجوا دی گئی ہیں۔


واضح رہے کہ اس سے قبل کورونا وائرس میں اضافے کی وجہ سے ہالزمیں شادی پرپابندی کاحکم نامہ اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کی گئی ہے ۔

اس سلسلے میں اسلام آباد مارکی ایسوسی ایشن کی جانب سے ہائی کورٹ میں درخواست دائر کردی ، جس کے متن میں کہا گیا ہے کہ کوروناکے بڑھنے کا جواز بناکر20 نومبر سے شادی ہال پر پابندی لگائی گئی ہے ۔


ہال کے اندر شادی پرپابندی کے نوٹی فکیشن کا کوئی قانونی جوازنہیں ہے ، اس لیے 6 نومبر کا نوٹی فکیشن بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے ، انتظامیہ کی طرف سے جاری کردہ نوٹی فکیشن آئین کے آرٹیکل 4 ، 18 اور آرٹیکل 25 کے منافی ہے ۔


اس لیے عدالت سے استدعا کی جاتی ہے کہ عدالت ہال میں شادی پرپابندی کے نوٹی فکیشن کو کالعدم قرار دے۔



%d bloggers like this: