وفاقی حکومت کا الیکٹرک گاڑیوں کی پالیسی متعارف کرانے کا فیصلہ

وفاقی حکومت کا الیکٹرک گاڑیوں کی پالیسی متعارف کرانے کا فیصلہ

آئندہ 2سے 3ہفتوں میں الیکٹرک گاڑیوں کی پالیسی متعارف ہوگی،حماد اظہر

وفاقی حکومت آئندہ 2 سے 3 ہفتوں کے دوران بجلی سے چلنے والی چار پہیوں کی گاڑیوں کی پالیسی کا اعلان کرے گی، جبکہ اس سے قبل حکومت دو اور تین پہیوں والی الیکٹرک گاڑیوں کی پالیسی کا اعلان کرچکی ہے۔

وفاقی وزیرصنعت و پیدوار حماد اظہر نے بتایا کہ الیکٹریکل وہیکل پالیسی اگلے 2 سے 3 ہفتوں کے اندر متعارف کروائی جائے گی،پالیسی آٹوموبائل انڈسٹری کے امور پر توجہ دے گی، لیکن مجموعی اقدامات کے لئے جون تک انتظار کرنا ہوگا، انہوں نے کہا کہ حکومت کیلئے بھی یہ ایک فائدہ مند بات ہے کہ اس شعبے میں درپیش چیلنجز سے نمٹنے کیلئے اور مواقع کے بارے میں جاننے کیلئے ہمارے پاس وقت ہے،اس وقت میں ہم خود کو اس شعبے میں کام کرنے کیلئے مزید تیار کرسکتے ہیں اقدامات کا جائزہ لے سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ ایک سال میں اسمارٹ فون اور فیچر فون دونوں کی تیاری اور اسمبلنگ میں پاکستان میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے اور آٹوموبائل مینوفیکچررز اب پاکستان میں اپنے نئے پلانٹ لگانے یا اپنے موجودہ پلانٹس کو بڑھانے میں دلچسپی لے رہے ہیں۔

حماد اظہر نے کہا کہ آٹوموٹو ڈویلپمنٹ پالیسی 2016 میں تیار کی گئی تھی اور جون 2021 میں اس کی میعاد ختم ہورہی ہے۔ جب تک یہ پالیسی ختم نہیں ہوجاتی ، ہم اس طبقے کے لئے کوئی اقدامات نہیں کرسکتے ہیں ، لیکن اس کے بعد ہمیں اس شعبے پر کام کرنے کا موقع ملے گا اور وزیر قانون نے کہا ہے کہ پاکستان میں آٹوموبائل صنعت کو فروغ دینے کے لئے قانون سازی کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ متعدد آٹوموبائل کمپنیاں جو ابھی تک پاکستان میں کام نہیں کررہی ہیں انہوں نے بھی ملک میں کام کرنے کی دلچسپی ظاہر کی ہے،جن کمپنیوں کے پاس پہلے ہی پاکستان میں پلانٹس موجود ہیں انھوں نے اپنے کاموں میں توسیع کی اور وہ مزید اپنا کاروبار بڑھانا چاہتے ہیں،حماد اظہر نے بتایا کہ ٹویوٹا پاکستان نے پیداوار کے لئے تیسرا مرحلہ شروع کیا جبکہ کیا kia))نے ملک میں اپنی پیدواری صلاحیت دوگنی کردی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں آٹوموبائل انڈسٹری کو "ممنوعہ محصولات” کی حد تک بہت حد تک محفوظ کیا گیا، ٹیکس ، فرائض ، اور مقامی صنعت کے لئے دیگر حفاظتی اقدامات نے نئی کمپنیوں کا کاروبار کرنا مشکل بنا دیا تھا اور پاکستان میں پہلے سے کام کرنے والوں کیلئے اس پر پابندی لگا دی تھی،گزشتہ پالیسی کسی کو بطور تحفہ کار دینے کی تھی اور اس کا شدید غلط استعمال کیا جارہا تھا۔

وزیرصنعت و پیدوار نے انکشاف کیا کہ حکومت اس صنعت کو تحفظ فراہم کرنے کے لئے تیار ہے جس میں آٹوموبائل سیکٹر کے لئے ٹیرف بھی شامل ہے لیکن اب تحفظات بہت زیادہ ہیں۔ انہوں نے کہا ، "ایک بار جب پالیسی ختم ہوجاتی ہے تو ، ہم ان نرخوں کو ایک نئی نظر سے دیکھ سکتے ہیں اور اس صنعت کے مسائل کو حل کرنے کے لئے کوئی اور ضروری اقدامات بھی کرسکتے ہیں۔

حماد اظہر سے سوال پوچھا گیا کہ نئی کمپنیاں پاکستان میں گاڑیاں تیار کریں گے یا محض اسمبلی پلانٹ لگائیں گی، جس پر انہوں نے واضح کیا کہ ابتدا میں اسمبلنگ آپریشنز کا حصہ بنیں گی لیکن چونکہ ان کے محصولات میں مراعات 10 سال بعد ختم ہوجائیں گی ، اس کے بعد انہیں مقامی پیداوار کا بھی موقع ملے گا۔

The post وفاقی حکومت کا الیکٹرک گاڑیوں کی پالیسی متعارف کرانے کا فیصلہ appeared first on Siasat.pk Urdu News – Latest Pakistani News around the clock.

%d bloggers like this: