وٹس ایپ کی متبادل ایپس کونسی ہیں؟

وٹس ایپ کی متبادل ایپس کونسی ہیں؟

وٹس ایپ کی متبادل ایپس کونسی ہیں؟

واٹس ایپ کی پرائیویسی پالیسی سے پریشان صارف اس ایپ کے علاوہ کونسا پلیٹ فارم استعمال کر سکتے ہیں؟

گوکہ واٹس ایپ ایسی معروف میسجنگ ایپ ہے جو کہ دنیا بھر میں انتہائی مقبول ہے اور اس کے صارفین کی تعداد بھی کروڑوں میں ہے مگر صارفین کے ڈیٹا سے متعلق اس کی ترمیم شدہ پالیسی نے اپنے استعمال کرنے والوں کو مشکل میں ڈال دیا ہے۔ اس پالیسی کے تحت واٹس ایپ صارفین کا ڈیٹا نہ صرف اب فیس بک بلکہ کمپنی کی زیر ملکیت دیگر کمپنیاں بھی اس کو استعمال کر سکیں گی۔

واٹس ایپ کے مطابق اس پالیسی کا مقصد صارفین کی دلچسپی کے مطابق اشتہاری مہم کو منظم کرنا ہے۔ کمپنی کی اس پالیسی پر صارفین نے شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے دیگر ایپس کے استعمال پر غور کرنا شروع کر دیا ہے۔

وٹس ایپ کی متبادل ایپس کونسی ہیں؟

واٹس ایپ سے ملتی جلتی اور اس سے بھی پرانی ایک ایپ ہے جس کا نام وائبر ہے۔ یہ پاکستانی سمیت دنیا بھر میں مشہور ہے اور اس میں روزمرہ کے وہ تمام فیچرز موجود ہیں۔ اس کی پرائیویسی پالیسی کے مطابق اس کے میسجز بھی اینڈ ٹو اینڈ اینکرپٹڈ ہیں۔ یہ 10 سال پہلے مارکیٹ میں موجود تھی۔

وٹس ایپ کی متبادل ایپس کونسی ہیں؟

وائر نامی ایپلی کیشن اسکائپ کے شریک بانی نے بنائی تھی یہ بھی اینڈ ٹو اینڈ اینکرپٹڈ سسٹم رکھتی ہے اور اینڈرائیڈ اور آئی فون میں بھی دستیاب ہے مگر نہ معلوم وجوہات کی وجہ سے غیر معروف ہے۔

چینی میسجنگ ایپ وی چیٹ کے دنیا بھر میں ڈیڑھ ارب صارفین موجود ہیں یہ واٹس ایپ ہی کی طرح سے کام کرتی ہے جو کہ سب سے زیادہ چین میں مقبول ہے۔ چین کی ملکیت ہونے کی وجہ سے مغربی ممالک کے لوگ اسے اپنے لیے غیر محفوظ تصور کرتے ہیں۔

وٹس ایپ کی متبادل ایپس کونسی ہیں؟

ٹیلی گرام کو 2013 میں روس سے تعلق رکھنے والے دو بھائیوں نے لانچ کیا تھا اس کی سیکیورٹی اور ڈیٹا پالیسی کا نظام اتنا سخت ہے کہ اسے آج تک دنیا کا کوئی ملک نہیں توڑ سکا۔ واٹس ایپ کی ڈیٹا پالیسی کے بعد تو اس کے صارفین میں حیران کن حد تک اضافہ ہو رہا ہے۔

وٹس ایپ کی متبادل ایپس کونسی ہیں؟

اس کے فیچرز بھی واٹس ایپ جیسے ہی ہیں تاہم اس کی سب سے بڑی خامی یہ ہے کہ اس کو کمپیوٹر پر استعمال کرنے کے لیے ابھی نظام متعارف نہیں کرایا جا سکا۔

وٹس ایپ کی متبادل ایپس کونسی ہیں؟

سگنل نامی معروف ایپ واٹس ایپ ہی کی طرح کے تمام فیچرز رکھتی ہے جس کے استعمال کا مشورہ ایلون مسک کی جانب سے بھی لوگوں کو دیا گیا تھا۔ اس ایپ کو واٹس ایپ ہی کی طرح ڈیسک ٹاپ یا لیپ ٹاپ پر استعمال کر سکتے ہیں۔

وٹس ایپ کی متبادل ایپس کونسی ہیں؟

کک نامی ایپ بھی میسجنگ کے لیے ہی استعمال کی جاتی ہے جس میں آپ کو نمبر کی ضرورت نہیں بلکہ اس کی بجائے ایک میل چاہیے ہوتی ہے۔ اس کی سب سے بڑی خامی یہ ہے کہ اس میں چیٹ ہسٹری کو سٹور کرنے کے لیے فون کی میموری استعمال ہو تی ہے جسے فون بدلنے کی صورت میں واپس حاصل نہیں کیا جا سکتا۔

یہ ایپ اپنی غیر محفوظ پالیسی کی وجہ سے بدنام ہے یہی وجہ ہے کہ اسے زیادہ تر جرائم پیشہ افراد استعمال کرتے ہیں۔

The post وٹس ایپ کی متبادل ایپس کونسی ہیں؟ appeared first on Siasat.pk Urdu News – Latest Pakistani News around the clock.

%d bloggers like this: