وہی ہوا جو ہمیشہ سے ہوتا آیا ہے۔۔!! جی الیون حادثہ ، کشمالہ طارق نے لواحقین کو کیسے منا لیا؟ عدالت میں سب کچھ سامنے آگیا

<!– –>

<!–

(adsbygoogle = window.adsbygoogle || []).push({});
–> <!–

googletag.cmd.push(function() { googletag.display(‘div-gpt-ad-1518176776442-0’); });

–>
<!–

googletag.cmd.push(function() { googletag.display(‘div-gpt-ad-1518766058477-0’); });

–>

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)   کشمالہ طارق اور جاں بحق افراد میں سے 3 کے لواحقین  کے ساتھ صلح ہوگئی، عدالت میں صلح نامہ جمع۔



آج عدالت میں اسی مقدمے کی سماعت ہوئی۔اسلام آباد کی عدالت کے ایڈیشنل سیشن جج شیخ محمد سہیل نے کیس کی سماعت کی۔ملزم کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ حادثے میں جاں بحق ہونے والے چار افراد میں سے تین کے لواحقین سے راضی نامہ ہو چکا ہے۔جب کہ سرکاری وکیل نے کشمالہ طارق کے بیٹے اذالان کی ضمانت کی مخالف کرتے ہوئے کہا کہ ابھی ملزم کے پیش کردہ لائسنس کی تصدیق نہیں ہوئی ہے۔ 3 افراد کی حد تک راضی نامہ ہوا ہے تو ورثاء کے بیان حلفی سامنے نہیں آئے۔سرکاری وکیل نے استدعا کی کہ ایک متوفی کے ورثاء سے ملزم کا کوئی راضی نامہ نہیں ہوا ہے، چار افراد کی جان گئی ہے۔ضمانت کی درخواست منسوخ کی جائے۔








<!–

–>


%d bloggers like this: