پاکستان کا سب سے امیرترین اور غریب ترین سینیٹر کون؟

الیکشن کمیشن نے سینیٹ ارکان کے مالی سال20-2019 کے گوشواروں کی تفصیلات جاری کر دیں

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ایوان بالا (سینیٹ) کے ارکان کے مالی سال 20-2019 کیلئے جمع کرائی گئی اثاثہ جات کی تفصیلات پبلک کر دیں جن کے مطابق امیر ترین رکن سینیٹر تاج آفریدی ہیں جن کے اثاثہ جات کی مالیت ایک ارب 22 کروڑ 27 لاکھ روپے ہے ان کے بیرون ممالک 16 کروڑ 71 لاکھ روپے کے اثاثے ہیں۔ جبکہ سب سے کم مالیت کے اثاثہ جات کے مالک امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق ہیں۔

جاری کردہ تفصیلات کے مطابق چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے اثاثوں کی مالیت 10 کروڑ 63 لاکھ ہے۔ ان کی پاکستان میں جائیداد کی مالیت ساڑھے پانچ کروڑ ہے اور ان کے پاس 4 گاڑیاں ہیں۔ ڈپٹی چئیرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا 6 کروڑ 77 لاکھ روپے کے اثاثوں کے مالک ہیں۔

وفاقی وزرا میں سے اعظم سواتی 81 کروڑ 12 لاکھ روپے، فروغ نسیم 39 کروڑ 96 لاکھ روپے اور شبلی فراز کے4کروڑ 67 روپے مالیت کے اثاثے ہیں۔

سینیٹ میں قائد ایوان ڈاکٹر شہزاد وسیم 20 کروڑ 21 لاکھ روپے مالیت کے اثاثوں کے مالک ہیں، ان کی اہلیہ کے اثاثوں کی مالیت 17کروڑ 23 لاکھ ہے۔

سینیٹر رحمان ملک 1.3 ملین پاؤنڈ کے بیرون ملک اثاثوں کے مالک ہیں۔ ان کے پاس 2.7 ملین روپے کا 50 تولے سونا ہے جو ان کی اہلیہ کی ملکیت ہے۔ سینیٹر مظفر حسین شاہ 3 کروڑ روپے جبکہ سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر 12 کروڑ سے زائد غیر منقولہ جائیداد کے مالک ہیں۔ ان کے ایک کروڑ 50 لاکھ روپے اسٹاک شیئرز ہیں جبکہ 3 کروڑ 84 لاکھ روپے سے زائد کی گاڑیوں کے مالک ہیں اور 2 کروڑ 34 لاکھ روپے سے زائد کی رقم بینک اکاؤنٹ میں بھی ہے۔

سینیٹر فیصل جاوید ایک کروڑ روپے، سینیٹر عبدالقیوم 8 کروڑ 64 لاکھ روپے سے زائد اثاثوں کے مالک ہیں۔ ان کی ملکیت میں زمین اور بینک اکاؤنٹس شامل ہیں۔ سینیٹر پرویز رشید کے پاکستان اور بیرون ملک میں کوئی اثاثے نہیں، ان کا پاکستان اور بیرون ملک میں کوئی کاروبار بھی نہیں۔ انہوں نے صرف 33 لاکھ روپے کی رقم بینک اکاؤنٹ میں ظاہر کی ہے۔

سینیٹر راجہ ظفر الحق نے الیکشن کمیشن میں اپنی جائیداد ظاہر کی لیکن مالیت نہیں بتائی۔ انہوں نے بینک اکاؤنٹ میں صرف 50 ہزار روپے ظاہر کیے۔ سینیٹر عبدالکریم 20 کروڑ سے زائد اثاثوں کے مالک ہیں۔ ان کے پاس 3 کروڑ سے زائد کی رہائشی جائیداد ہے۔ انہوں نے 3 کروڑ سے زائد کی زمین جبکہ 13 کروڑ روپے سے زائد کا کاروبار ظاہر کیا۔

سینیٹر رضا ربانی کے پاس پاکستان میں ایک کروڑ 53 لاکھ کا کاروبار ہے۔ انہیں 62 لاکھ روپے کی جائیداد تحفے میں ملی۔ ان کے بینک اکاؤنٹ میں لاکھوں روپے اور 15 لاکھ 55 ہزار سے زائد کا انکم ٹیکس ظاہر کیا ہے۔ سینیٹر صلاح الدین ترمذی 19 کروڑ 35 لاکھ روپے سے زائد اثاثوں کے مالک ہیں۔ سینیٹر عبدالغفور حیدری تقریباً 63 لاکھ روپے کے اثاثوں کے مالک ہیں۔ ان کے ایک بینک اکاؤنٹ میں ایک ہزار 916 روپے جبکہ دوسرے اکاؤنٹ میں 2 ہزار 94 روپے ہیں۔

گوشواروں کے مطابق سب سے غریب ترین رکن سینیٹ سینیٹر سراج الحق ہیں انہوں نے 12 کنال کی وراثتی زمین اور 3 لاکھ 61 ہزار روپے سے زائد کا کاروبار ظاہر کیا، ان کے بینک اکاؤنٹ میں 6 لاکھ روپے ہیں۔

The post پاکستان کا سب سے امیرترین اور غریب ترین سینیٹر کون؟ appeared first on Siasat.pk Urdu News – Latest Pakistani News around the clock.

%d bloggers like this: