پیراشوٹرز کو اہم عہدوں سے نوازا جا رہا ہے، پارٹی کے پرانے اور نظریاتی کارکن سخت غم و غصے کا شکار،پی ٹی آئی کے دیرینہ رہنما کی وزیراعظم کے فیصلوں پر شدید تنقید

اسلام آباد(آن لائن)خیبر پختونخوا کے علاقے درگئی ملا کنڈ سے پی ٹی آئی کے سابق نائب صدر عنایت خان نے کہا ہے کہ پیراشوٹرز کو اہم عہدوں سے نوازا جارہا ہے یہی وجہ ہے کہ پارٹی کو ضمنی انتخابات میں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے کیونکہ عام ورکر قیادت کے ان غیر منصفانہ فیصلوں کو قبول کرنے کو کسی طرح تیار نہیں ہے، پارٹیقیادت نے سینٹ انتخابات کیلئے نظریاتی کارکنوں کو نظرانداز کرکے ایسے لوگوں کو پارٹی ٹکٹ جاری کئے ہیں جن کا پارٹی یا اسکے منشور سے کوئی تعلق نہیں ہے جس پر پارٹی کے پرانے اور نظریاتی

کارکن سخت غم و غصے کے شکار ہیں۔ سینٹ کے ٹکٹ جاری کرتے وقت میرٹ کی دھجیاں اڑائی گئی ہیں، وزیراعظم عمران خان کو عام ورکرز کی آواز سنتے ہوئے پرانے کارکنوں کو آگے لانا چاہیئے بصورت دیگر پارٹی کو تنزلی سے کوئی بھی نہیں بچا سکے گا، نیشنل پریس کلب اسلام آباد میں پی ٹی آئی کے ضلعی راہنمائوں کامران خان اور عتیق الرحمان کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے عنایت خان کا کہنا تھا کہ سینٹ کے ٹکٹوں کے حوالے سے پی ٹی آئی میں جو بندر بانٹ ہوئی ہے اس پر پی ٹی آئی کا عام اور نظریاتی کارکن سخت پریشانی اور غم وغصے کا شکار ہے، انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئَ کہا کہ فیصل سلیم اور ذیشان خانزادہ دونوں کا تعلق مردان شہر سے ہے اور یہ اربوں پتی لوگ ہیں مگر ان کا پارٹی سے کوئی تعلق نہیں ہے، ڈاکٹر ہمایوں محمد ہیئر ٹرانسپلانٹ کلینک کا مالک ہے اور پمز میں بھی چیئرمین کی کرسی پر براجمان ہے یہ بہت مصروف شخص ہے جس کا سیاست سے کوئی لینا دینا ہے نہ اسکا کوئی حلقہ ہے یہ کیسے عوام کی خدمت کرے گا جبکہ معتبر ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ اسے وفاقیوزیر صحت بنایا جائے گا، دوست محمد ریٹائرڈ ڈپٹی سیکرٹری ہے جسے ۳۱۰۲ اور ۸۱۰۲ میں جنوبی وزیرستان کے عوام نے بری طرح مسترد کیا ہے۔ ثانیہ نشتر جو مشیر کے عہدے پر تعینات ہے، شبلی فراز کا میرٹ صرف یہ ہے کہ وہ امریکہ پلٹ اور مشہور شاعراحمد فراز کا بیٹا ہے، حفیظ شیخ نے پیپلز پارٹی کے دور میں کونسا تیر ماراتھا جو اب تبدیلی لے آئے گا، ان سب کا پی ٹی آئی سے کوئی تعلق نہیں ہے، انہوں نے عمران خان سے اپیل کی کہ وہ ان فصلی بٹیروں کی بجائے پارٹی کے حقیقی اور نظریاتی کارکنوں کو آگے لیکر آئیں اور پارٹی کو تنزلی سے بچائیں کیونکہ یہ مفاد پرست لوگ2023 کے انتخابات سے پہلے اڑ کر اپنے گھونسلوں میں چلے جائینگے اور اس طرح کی سلیکشنز کے نتیجے میں پارٹی کو ضمنی انتخابات میں ہونے والی شکست کی طرح ڈینٹ پڑتے رہیں گے۔

Leave a Reply

%d bloggers like this: