کورنا وائرس کی ویکسین کی ایڈوانس بکنگ کے لئے وزارت صحت نے وفاق سے کتنی رقم کا مطالبہ کردیا ؟ تازہ ترین خبر

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وزارت صحت نے کروناویکسین کی ایڈوانس بکنگ کے لیے 15کروڑ ڈالر مانگ لیے، متوقع ویکسین کی ایڈوانس بکنگ سےمتعلق سمری اقتصادی رابطہ کمیٹی(ای سی سی) کو ارسال کردی گئی۔تفصیلات کے مطابق وزارت صحت کی جانب سے ای سی سی کو بھیجی گئی سمری میں کہا گیا ہے کہ ای سی سی متوقع



کرونا ویکسین کی بکنگ کے لیے 15کروڑ ڈالر مختص کرے، ٹیکنیکل ایکسپرٹ کمیٹی نے کروناویکسین بکنگ کا تخمینہ15کروڑ ڈالر لگایا، عالمی سطح پر ویکسین کی تیاری فیز تھری میں داخل ہوچکی ہے۔وزارت صحت کا اپنی سمری میں کہنا ہے کہ تمام ممالک کروناویکسین کی ایڈوانس بکنگ کررہے ہیں، ویکسین2021کی پہلی اور دوسری سہ ماہی میں دستیاب ہوگی، ویکسین کی خریداری پیپراقواعد کے تحت کی جائے گی۔سمری کے مطابق ویکسین سازاداروں کو ادائیگی غیرملکی کرنسی کی صورت میں ہوگی، پاکستان نے مفت ورعایتی ویکسین فراہمی کے لیے گاوی سے رابطہ کیا ہے، گاوی سے ویکسین2021کے آخر میں ملنے کا امکان ہے، ویکسین سے متعلق بین الوزارتی اور نیشنل ایکسپرٹ کمیٹی قائم کی گئی تھی۔اس حوالے سے سمری میں یہ بھی کہا گیا کہ ویکسین کی بکنگ کا معاملہ این سی اوسی میں زیربحث ہے۔خیال رہے کہ عبدالحفیظ شیخ کی زیرصدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس آج ہوگا۔ ای سی سی کی جانب سے کروناویکسین بکنگ کی سمری منظور کیے جانے کا امکان ہے۔ وزارت صحت نے وزیراعظم کو گزشتہ ماہ ویکسین بکنگ سے متعلق خط لکھا تھا۔ وزیراعظم سے ویکسین بکنگ کا معاملہ ای سی سی بھجوانے کی درخواست کی گئی تھی۔وزارت صحت نے وزیراعظم کو ممکنہ کروناویکسین کی بکنگ کی تجویز دی تھی۔ وزارت صحت نے ایک کروڑ شہریوں کے لیے ویکسین بکنگ کی تجویز دی تھی جن میں ہیلتھ ورکرز اور بوڑھے شہری بھی شامل ہوں گے۔







%d bloggers like this: