کورونا سے متعلق غلط خبر کیوں نشر کی؟ عدالت نے صحافی کو سخت سزا سُنا دی

دبئی (ویب ڈیسک) کرونا کے حوالہ سے غلط خبر شائع کرنے پر عدالت نے صحافی کو 2 برس کی سزا سنا دی۔ واقعہ ابوظہبی میں پیش آیا جہاں فیڈرل عدالت نے کرونا کے حوالہ سے غلط خبر نشر کرنے پر مقامی ٹی وی کے رپورٹر کو دو برس قید کی سزا سنائی ہے۔



مقامی ٹی وی کے ایک رپورٹر نے کورونا وائرس سے ایک ہی خاندان کے 5 افراد کی ہلاکت کی خبر نشرکی تھی جس کی معاونت ایک عرب ملک سے تعلق رکھنے والے غیر ملکی نے کی تھی۔ غلط خبرکی وجہ سے معاشرے میں کافی خوف ہراس پھیل گیا تھا۔ خبرنشرہونے کے بعد اس کی تردید وزارت صحت کی جانب سے بھی کی گئی تھی اور اس حوالے سے رپورٹر اور غیر ملکی کے خلاف مقدمہ بھی قائم کیا گیا تھا۔ عدالت نے غلط خبر پر دونوں کو2 برس قید کی سزا کے ساتھ غیر ملکی کے لیے ملک بدری کے احکامات بھی جاری کئے ہیں ۔ ابتدائی عدالتی فیصلے کے خلاف اپیل دائرکی گئی جس پر فیڈرل اپیل کورٹ نے حالات و شواہد کاجائزہ لیتے ہوئے سابق عدالت کے فیصلے کو برقرار رکھتے ہوئے سزاکی توثیق کردی۔ واضح رہے کہ عرب امارات میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے سدباب کیلئے جہاں سخت اقدامات کئے جارہے ہیں وہیں عوام کو کہ ایس اوپیز کی خلاف ورزی کررہے ان پر جرمانہ عائد کیا جا رہا ہے۔







%d bloggers like this: