گرفتار بھارتی اینکر ارناب گوسوامی کی دہائیاں دینے کی ویڈیو منظرعام پر

بھارتی اینکر ارنب گواسوامی کی ضمانت کی اپیل مسترد، عوام سے مدد کی اپیل

اپنے تکبر اور چیخ وپکار کی وجہ سے مشہور بھارتی اینکر ارنب گواسوامی جو کسی کو بھی خاطر میں نہیں لاتے تھے، مودی اور اپنے نظریات کے مخالفوں کو بے عزت کرکے رکھ دیتے ، وہ آج نگاہ عبرت بنے ہوئے ہیں۔ خود کشی کیلئے اکسانے کے الزام میں عدالت نے ضمانت کی اپیل بھی مسترد کردی ہ، جس پر ٹی وی اینکر نے بھارتی جنتا سے مدد مانگ لی ہے

میڈیا سے گفتگو میں ارنب گواسوامی پریشان حال نظرآئے انہوں نے کہا آپ سب دیکھ رہے ہیں مجھے وکیل سے بات کرنے کی اجازت نہیں میرے ساتھ ظلم ہو رہاہے یہ لوگ مجھے جیل میں ڈالنا چاہتے ہیں میرے ساتھ ناانصافی ہورہی ہے میری بات نہیں سنی جارہی میں عوام سے سپریم کورٹ سے اپیل کرتا ہوں مجھے باہر نکالا جائے، میری جان کو خطرہ ہے، ارنب گوسوامی نے الزام لگایا ہے کہ ان کو مارا پیٹا گیا ہے اور ان کے ساتھ بدسلوکی کی گئی ہے۔

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ارنب گوسوامی عوام سے اپیل کررہے ہیں، اسی دوران گاڑی چل پڑتی ہے اور ارنب گوسوامی چلتی گاڑی سے دہائیاں دیتے نظر آرہے ہیں۔

بھارت کے معروف ٹی وی اینکر اور رپبلک ٹی وی کے سربراہ ارنب گوسوامی کو بمبئی ہائی کورٹ نے عبوری ضمانت دینے سے انکار کر دیا۔

ارنب گوسوامی کو رائے گڑھ پولیس نے خودکشی پر اکسانے کے ایک معاملے میں گرفتار کیا اور وہ 14 دنوں کی عدالتی حراست میں ہیں۔

ہائی کورٹ نے اپنے فیصلے میں کہا کہ ارنب اگر چاہیں تو اس فیصلے کو چیلنج کرنے کے لیے آئندہ چار دنوں میں سیشن کورٹ میں جاسکتے ہیں۔ اس کے علاوہ عدالت نے یہ بھی کہا ہے کہ وہ معمول کی ضمانت کے لیے ذیلی عدالت میں اپیل کر سکتے ہیں۔

گزشتہ بدھ کو ارنب گوسوامی کو ایک دو سال پرانے خودکشی کے مقدمے میں حراست میں لیا گیا تھا اور انھیں مجسٹریٹ کے سامنے پیش کیا گیا جہاں انھیں 14 دنوں کی پولیس حراست کے بجائے عدالتی تحویل میں دیا گیا۔

ارنب گوسوامی کی جانب سے ممبئی کی عدالت میں عبوری ضمانت کی درخواست دی گئی جس پر کئی روز تک سماعت جاری رہی۔ عدالت کا کہنا ہے کہ وہ تمام فریقین کو سنے بغیر اس مقدمے پر فیصلہ نہیں دے سکتی۔

The post گرفتار بھارتی اینکر ارناب گوسوامی کی دہائیاں دینے کی ویڈیو منظرعام پر appeared first on Siasat.pk Urdu News – Latest Pakistani News around the clock.

%d bloggers like this: