گستاخانہ خاکوں پر نوجوان نے استاد کاسرقلم کردیا، نوجوان پولیس کے ہاتھوں شہید

فرانس میں سکول میں طلبا کو گستاخانہ خاکے دکھانے پر ٹیچر کو نوجوان نے قتل کرکے سر دھڑ سے علیحدہ کردیا، پولیس نے فائرنگ کرکے نوجوان کو شہید کردیا۔

پیرس کے شمال مغرب میں واقع کونفلان سینٹ اونوریئن میں پیش آیا۔ کئی روز قبل اسکول کے استاد نے بچوں سے پیغمبرِ اسلام کے گستاخانہ خاکوں پر گفتگو شروع کی جس پر کئی بچوں کے والدین نے غم و غصے کا اظہار کیا تھا۔

توہینِ رسالت پر ہلاک ہونے والے استاد نے کچھ روز قبل بچوں کو حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کے خاکے دکھائے تھے جس پر کئی بچوں کے والدین نے پولیس نے شکایت کی تھی لیکن پولیس نے اس پر کوئی ایکشن نہیں لیا تھا۔

اس عمل کے بعد چیچنیا سے تعلق رکھنے والے نوجوان نے استاد پر خنجر سے حملہ کرکے اسے مار دیا۔ فرانسیسی پولیس نے اسے دہشت گردی کا واقعہ قرار دیا ہے۔

پولیس کے مطابق 18 سالہ حملہ آور کو 600 میٹر دوری پر گولی کا نشانہ بنایا گیا جس کے ہاتھوں میں خنجر بھی دیکھا گیا۔

عینی شاہدین کے مطابق اس نے توہین اسلام کے مرتکب استاد کی گردن پر حملہ کیا تھا۔

فرانس کے “لے مونڈے اخبار” کے مطابق قتل ہونے والے اسکول ٹیچر تاریخ اور جغرافیے کے استاد تھے اور وہ اپنی کلاس میں طلبا کے ساتھ آزادی اظہار رائے کے متعلق بات کر رہے تھے۔ انہوں نے پیغمبر اسلام کے متنازع خاکوں کے بارے میں بات کی تھی جسے “چارلی ایبڈو میگزین” نے شائع کیا تھا اور اس پر بہت سے اسلامی ممالک میں غم و غصہ پایا گیا تھا۔

فرانسیسی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق اس سے قبل رواں ماہ چند مسلمان والدین نے اسکول انتظامیہ سے اس استاد کی جانب سے چارلی ایبڈو کے مقدمے کے بارے میں بحث کرتے ہوئے متنازع خاکوں کے استعمال پر شکایات بھی کی تھیں۔

فرانسیسی پولیس نے یہ بھی اعتراف کیا کہ اس عمل کے خلاف بہت سے والدین نے شکایت درج کرائی تھیں تاہم استاد کو مارنے والے شخص کا کوئی جاننے والا اسکول میں نہیں پڑھتا.

The post گستاخانہ خاکوں پر نوجوان نے استاد کاسرقلم کردیا، نوجوان پولیس کے ہاتھوں شہید appeared first on Siasat.pk Urdu News – Latest Pakistani News around the clock.

%d bloggers like this: