یہ کہیں طے نہیں ہوا تھا کہ استعفے آخری آپشن ہوں گے، مولانا پیپلز پارٹی پر برہم

یہ کہیں طے نہیں ہوا تھا کہ استعفے آخری آپشن ہوں گے، مولانا پیپلز پارٹی پر برہم

اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے پاکستان پیپلز پارٹی کے مؤقف کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ پی ڈی ایم بناتے ہوئے استعفوں کا آپشن رکھا گیا تھا لیکن ایسا طے نہیں ہوا تھا کہ استعفے آخری آپشن ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی) کے سربراہ فضل الرحمان نے پشاور  میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے گزشتہ روز ہونے والے پی ڈی ایم کے اجلاس سے متعلق کہا کہ پی ڈی ایم بناتے ہوئے استعفوں کا آپشن رکھا گیا تھا۔

انہوں نے استعفوں کے آخری آپشن اور ایٹم بم ہونے کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ ایسا کہیں طے نہیں ہوا تھا ۔

انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ روز اجلاس میں 10 میں سے 9جماعتوں کی لانگ مارچ کے حولے سے رائے لی تھی۔ جماعتوں نے لانگ مارچ پر استعفے دے کر جانے پر اتفاق کیا۔ پیپلز پارٹی کے انکار کے بعد یہ بھی آپشن دیا گیا کہ صرف قومی اسمبلی سے استعفے دیے جائیں، آدھا ایوان خالی ہوجائے گا لیکن یہ تجویز بھی پیپلز پارٹی نے مسترد کر دی۔

انہوں نے مزید کہا کہ پی پی نے سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی سے مشورہ کرنے کی مہلت مانگی جو دے دی گئی جبکہ پی ڈی ایم متحد ہے، مختلف مسائل پر اختلاف رائے ہوتا رہتا ہے۔

واضح رہے کہ آج پی ڈی ایم  کے سربراہ مولانا فضل الرحمان اور  مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف کے درمیان رابطہ بھی ہوا ہے ، ٹیلی فونک رابطے میں سابق صدر آصف علی زرداری اور مریم نواز کے مابین تلخ گفتگو پر تبادلہ خیال ہوا۔ اس موقع پر مولانا فضل الرحمان نےآصف علی زرداری کے غیر جمہوری رویے پر دکھ کا اظہار کیا۔

The post یہ کہیں طے نہیں ہوا تھا کہ استعفے آخری آپشن ہوں گے، مولانا پیپلز پارٹی پر برہم appeared first on Siasat.pk Urdu News – Latest Pakistani News around the clock.